Khatme Nubuwwat Blog

ختم نبوۃ و قادیانی

حضرت مولانا خواجہ ابو سعد احمد خان

حضرت مولانا خواجہ خان محمد صاحب مدظلہ فرماتے ہیں کہ حضرت مولانا حبیب الرحمٰن لدھیانوی ، صدر مجلس احرار نے ایک موقع پر ارشاد فرمایا کہ تحریک مسجد شہید گنج کے سلسلہ میں پورے ملک سے دو اکابر اولیاء ایک حضرت اقدس مولانا ابو سعد احمد خان اور دوسرے حضرت اقدس شاہ عبد القادر رائے پوری نے ہماری رہنمائ کی اور تحریک سے کنارہ کش رہنے کا حکم دیا۔ فرمایا ۔ حضرت اقدس ابو سعد احمد خان بانی خانقاہ سراجیہ نے یہ پیغام بھجوایا تھا کہ " مجلس احرار تحریک مسجد شہید گنج سے علیحدہ رہے اور مرزائیت کی تردید کا کام رکنے نہ پائے اسے جاری رکھا جائے۔ اس لئے اگر اسلام باقی رہے گا تو مسجدیں باقی رہے گی اگر اسلام باقی نہ رہا تو مسجدوں کو کون باقی رہنے دیگا" مسجد شہید گنج کے ملبہ کے نیچے مجلس احرار کو دفن کرنے والے کفار اور قادیانی اپنے مقصد میں کامیاب نہ ہو سکے۔ جبکہ مرزائیت کی تردید کے لیے مستقل ایک جماعت مجلس تحفظ ختم نبوت پاکستان کے نام سے تشکیل پا کر قادیانیت کو ناکوں سے چنے چبوا رہی ہے۔

  802 Hits

ختم نبوت اور وحدت امت

ختم نبوت سے وحدت امت کا راز وابستہ ہے۔ فتنہ انکار ختم نبوت ملی وحدت کو پارہ پارہ کرنے کی ناپاک استعماری سازش تھی۔ آج کے تمام طبقات و مکاتب فکر مل کر ہی باہمی اتحاد و اعتماد سے اس فتنہ کو ختم کر سکتے ہیں۔ اللہ رب العزت کا فضل و کرم ہے کہ عالمی محلس تحفظ ختم نبوت نے اپنے اکابر کی اس سنت کو زندہ رکھنے کی حکمت عملی کو اپنایا ہوا ہے کہ مسئلہ ختم نبوت کسی ایک فرقہ کا مسئلہ نہیں پوری امت کا مشترکہ مسئلہ ہے۔ اس میں کوشش و کاوش اور اجتماعی طور پر بڑھ چڑھ کر حصہ لینا تمام مسلمانوں کے لیے انتہائ ضروری ہے اور رحمتہ العالمین صلی اللہ علیہ وسلم کی شفاعت کا باعث ہے۔ حضرت مولانا خان محمد

  681 Hits

Khatme Nubuwwat Awareness Program

بعد الحمد الصلوۃ وارسال التسلیمات و التحیات             فقیر ابوالخلیل خان محمد عفی عنہ

 

جناب واجب الاحترام علمائے کرامزید مجد کم العالی

 

السلام علیکم و رحمتہ اللہ

 

آپ کو معلوم ہے قادیانی۔ مرزائ اندر اندر مسلمانوں کو مرتد بنانے میں مصروف ہیں۔ میں آپ حضرات سے اللہ کے نام پر اپیل کرتا ہوں کہ مہینہ میں صرف ایک ہی دفعہ سھی اپنے خطبے میں صرف دس پندرہ منٹ تخفظ عقیدہ ختم نبوت اور قادیانی مرزا کا مکروہ چہرہ کے متعلق نوجوانوں کو آگاہ فرما دیا کریں۔ تا کہ ھم حضور صلی اللہ کے اس حق کو ادا کرنے میں خدا کے ہاں اجر کے مستحق بن سکیں۔ امید ہے کہ آپ توجہ فرمائیں گے۔

 

Continue reading
  673 Hits